سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

ای ڈی کی پوچھ گچھ کا مقصد مجھے انڈیا اتحاد کی میٹنگ میں جانے سے روکنا تھا: ابھیشیک بنرجی

کولکاتا: ترنمول کانگریس کے قومی جنرل سکریٹری ابھیشیک بنرجی نے دعویٰ کیا ہے کہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے ان سے پوچھ گچھ کے لیے بدھ کا ہی دن منتخب کیا، تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ وہ اپوزیشن اتحاد ‘انڈیا’ کی رابطہ کمیٹی کی پہلی میٹنگ میں شرکت نہ کر سکیں!

تقریباً 10 گھنٹے تک جاری رہنے والی میراتھن پوچھ گچھ کے بعد رات 9 بجے سے تھوڑا پہلے ای ڈی کے دفتر سے باہر نکلتے ہوئے ترنمول کے رکن پارلیمنٹ نے کہا، ’’انڈیا کی اہم جماعتوں کے ارکان نے مجھے ای ڈی کے سمن کو نظر انداز کرنے اور رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کرنے کو کہا تھا لیکن میں نے ای ڈی آفس آنے کا فیصلہ کیا۔ میں نے انڈیا کے ارکان سے میٹنگ ملتوی نہ کرنے کی بھی درخواست کی اور بدھ کی صبح 11.32 بجے ای ڈی کے دفتر پہنچا۔‘‘

انہوں نے دعویٰ کیا کہ ای ڈی نے انہیں انڈیا کی میٹنگ کے دن ان کو طلب کیا ہے اپوزیشن اتحاد میں ترنمول کی اہمیت کو ظاہر کرتا ہے۔ بنرجی نے کم سزا کی شرح کا حوالہ دیتے ہوئے ای ڈی اور سنٹرل بیورو آف انویسٹی گیشن (سی بی آئی) جیسی مرکزی ایجنسیوں کی ساکھ پر بھی سوال اٹھایا۔ انہوں نے کہا ’’اس قدر کم سزا کی شرح ظاہر کرتی ہے کہ مرکزی ایجنسیوں کی طرف سے کی جانے والی زیادہ تر تحقیقات محض سیاسی طور پر محرک ہوتی ہیں۔‘‘

بنرجی نے کہا ’’یہ انتہائی بدقسمتی کی بات ہے کہ ای ڈی اور سی بی آئی چناؤ اور انتخاب کی بنیاد پر مقدمات کی پیروی کر رہے ہیں۔ ہمیں بی جے پی کی حکومت والی ریاستوں میں ایسی کوئی کارروائی نظر نہیں آتی۔ اس کے علاوہ، اپوزیشن پارٹیوں کے کسی بھی لیڈر کو جو مرکزی ایجنسیوں کے ذریعہ ستایا جا رہا ہے، بی جے پی میں شامل ہوتے ہی کلین چٹ مل جاتی ہے۔‘‘

بینرجی نے رابطہ کمیٹی کے پہلے اجلاس کے دن ان کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے پر انڈیا کی دیگر حلیف جماعتوں کے رہنماؤں کا بھی شکریہ ادا کیا۔ ترنمول لیڈر نے بی جے پی پر یہ بھی الزام لگایا کہ وہ جان بوجھ کر ایجنسی کا راستہ استعمال کر رہی ہے تاکہ مہنگائی، بے روزگاری اور فرقہ وارانہ منافرت جیسے سلگتے مسائل پر لوگوں میں بڑھتی ہوئی شکایات کے خلاف جوابی بیان تیار کیا جا سکے۔