سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

پارلیمنٹ کے خصوصی اجلاس کا ایجنڈا غیر واضح، حکومت نے اجلاس سے ایک روز قبل بلائی آل پارٹی میٹنگ

نئی دہلی: مرکز نے پارلیمنٹ کے خصوصی اجلاس سے ایک دن قبل یعنی 17 ستمبر کو کل جماعتی اجلاس میٹنگ بلائی ہے۔ اس آل پارٹی اجلاس کو اہم سمجھا جا رہا ہے کیونکہ حکومت نے ابھی تک پارلیمنٹ کے خصوصی اجلاس کا ایجنڈا واضح نہیں کیا ہے۔ پارلیمنٹ کا خصوصی اجلاس 18 سے 22 ستمبر تک ہوگا۔

پارلیمنٹ کے خصوصی اجلاس کے ایجنڈے کے بارے میں معلومات نہ دینے پر کانگریس مرکزی حکومت پر حملہ کر رہی ہے۔ کانگریس نے سوال اٹھایا کہ سیشن شروع ہونے میں صرف چند دن باقی ہیں لیکن شاید ‘ایک شخص’ کے علاوہ کسی کو ایجنڈے کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہے۔ پارٹی کے جنرل سکریٹری جے رام رمیش نے ماضی میں منعقدہ پارلیمنٹ کی کچھ خصوصی میٹنگوں کا بھی ذکر کیا اور کہا کہ خصوصی میٹنگوں سے پہلے ایجنڈے کے بارے میں معلومات دستیاب تھیں۔

مہاراشٹر پردیش کانگریس کے صدر نانا پٹولے نے الزام لگایا کہ پارلیمنٹ کے آئندہ خصوصی اجلاس کا ایجنڈا ممبئی کو ریاست سے الگ کرنا اور اسے مرکز کے زیر انتظام علاقہ قرار دینا ہے۔ دراصل مرکزی حکومت نے 18 سے 22 ستمبر تک بلائے گئے خصوصی اجلاس کا ایجنڈا ابھی تک ظاہر نہیں کیا ہے۔ جس کی وجہ سے سیشن کے حوالے سے طرح طرح کی قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں۔

پارلیمنٹ کا خصوصی اجلاس 18 ستمبر سے پرانی عمارت میں شروع ہونے جا رہا ہے۔ توقع ہے کہ 19 ستمبر کو گنیش چترتھی پر پارلیمنٹ کی کارروائی کو نئی عمارت میں منتقل کیا جائے گا۔