سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

اِنڈیا-بھارت تنازعہ کے درمیان ’بلو ڈارٹ‘ نے اپنی ایک سروس کو دیا نیا نام

ایک طرف سیاسی حلقوں میں انڈیا-بھارت تنازعہ جاری ہے، اور دوسری طرف لاجسٹک کمپنی ’بلو ڈارٹ‘ نے اپنی ایک سروس کا نام بدل کر ’بھارت پلس‘ رکھنے کا اعلان کر دیا ہے۔ کمپنی نے آج اس سلسلے میں جانکاری دی کہ اپنی پریمیم سروس ’ڈارٹ پلس‘ کا نام بدل کر ’بھارت پلس‘ کر دیا ہے۔ بلو ڈارٹ نے بدھ کے روز کمپنی فائلنگ میں بتایا کہ یہ اسٹریٹجک تبدیلی ہے جس کو کمپنی کے سفر میں ایک سنگ میل کی طرح دیکھا جانا چاہیے۔

بلو ڈارٹ نے اپنے فیصلے کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ ’’یہ قدم ہمارے صارفین کی لگاتار وسیع ہوتی ضرورتوں کے ساتھ قدم ملانے کی کوشش ہے۔‘‘ کمپنی نے مزید کہا کہ وہ سبھی اسٹیک ہولڈرس کو اس تبدیلی والے سفر سے جڑنے کی دعوت دیتی ہے، جس سے ہم بھارت کو پوری دنیا اور دنیا کو بھارت سے جوڑنا جاری رکھ رہے ہیں۔

دراصل صدر جمہوریہ کی طرف سے 9 ستمبر کو جی-20 اجلاس کے دوران ’بھارت منڈپم‘ میں منعقد ہونے والے عشائیہ کے دعوت نامہ میں ’دی پریسیڈنٹ آف بھارت‘ کی طرف سے دعوت بھیجا گیا تھا۔ اسی دعوت نامہ پر شائع ’بھارت‘ لفظ کو لے کر سیاست تیز ہو چکی ہے۔ اپوزیشن پارٹیوں کا کہنا ہے کہ بی جے پی کی حکومت ملک کے نام پر بھی حملہ کر رہی ہے۔ بلو ڈارٹ کا تازہ قدم انڈیا بنام بھارت کی اسی بحث کے درمیان اٹھایا گیا ہے۔