سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

یوپی میں بارش نے تباہی مچا دی، 19 افراد ہلاک

لکھنؤ: یوپی میں موسلادھار بارش کی وجہ سے معمولات زندگی بری طرح متاثر ہوئے ہیں اور اس وجہ سے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مختلف شہروں میں 19 افراد جاں بحق ہوئے۔ کئی جگہیں بری طرح سیلاب میں ڈوبی ہوئی ہیں۔ اس کے پیش نظر راجدھانی لکھنؤ سمیت کئی اضلاع میں اسکول بند ہیں۔

ریلیف کمشنر کے دفتر سے پیر کو موصولہ اطلاع کے مطابق ریاست میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں بارش سے متعلق واقعات میں 19 لوگوں کی موت ہو گئی ہے۔

معلومات کے مطابق بھاری بارش کے باعث 13 افراد کی موت ہوئی جبکہ چار افراد کی موت آسمانی بجلی گرنے اور دو ڈوبنے سے ہوئی۔ ہردوئی میں چار، بارہ بنکی میں تین، پرتاپ گڑھ اور قنوج میں دو دو اور امیٹھی، دیوریا، جالون، کانپور، اناؤ، سنبھل، رام پور اور مظفر نگر میں ایک ایک موت ہوئی ہے۔

وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ تمام اضلاع کے عہدیداروں کو پوری تیزی کے ساتھ راحتی کاموں میں مصروف ہو جانا چاہئے۔ ڈی ایم کو چاہئے کہ وہ علاقے کا دورہ کریں اور امدادی کاموں پر نظر رکھیں۔ آفت سے متاثرہ لوگوں میں فوری طور پر جائز امدادی رقم تقسیم کی جائے۔ پانی جمع ہونے کی صورت میں نکاسی آب کے موثر انتظامات کئے جائیں۔ دریاؤں کے پانی کی سطح کو مانیٹر کیا جائے۔ فصلوں کو پہنچنے والے نقصان کا تخمینہ لگایا جائے اور حکومت کو رپورٹ فراہم کی جائے تاکہ متاثرہ کسانوں کو قواعد کے مطابق معاوضہ دیا جا سکے۔