سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

خوشخبری! اگست میں خوردہ مہنگائی گھٹ کر 6.83 فیصد پر پہنچی

ملک میں بڑھتی مہنگائی کے درمیان ایک بڑی خبر سامنے آ رہی ہے۔ اگست ماہ میں خوردہ مہنگائی گھٹی ہے جو عوام کے لیے راحت دینے والی ہے۔ موصولہ اطلاع کے مطابق سبزیوں و دیگر خوردنی اشیا کی قیمت گھٹنے کی وجہ سے خوردہ مہنگائی کی شرح اگست ماہ میں گھٹ کر 6.83 فیصد پر آ گئی ہے۔ حالانکہ اب بھی یہ آر بی آئی کے دائرے کے باہر ہے۔ آر بی آئی نے 24-2023 کے لیے خوردہ مہنگائی کے 5.4 فیصد رہنے کا اندازہ لگایا ہے۔

قومی شماریات دفتر (این ایس او) کی طرف سے منگل کو جاری آفیشیل اعداد و شمار کے مطابق صارفین پرائس انڈیکس (سی پی آئی) پر مبنی مہنگائی جولائی میں 7.44 فیصد تھی، جبکہ اگست 2022 میں یہ 7 فیصد تھی۔ اعداد و شمار کے مطابق اگست میں خوردنی اشیا کی مہنگائی گھٹ کر 9.94 فیصد رہی، جو کہ جولائی میں 11.51 فیصد تھی۔

اس درمیان ملک کا انڈسٹریل پروڈکشن (آئی آئی پی) جولائی ماہ میں 5.7 فیصد بڑھا ہے۔ این ایس او کی طرف سے منگل کے روز جاری اعداد و شمار کے مطابق آئی آئی پی کی بنیاد کی پیمائش کرنے والے انڈسٹریل پروڈکشن میں گزشتہ سال اسی ماہ میں 2.2 فیصد کا اضافہ ہوا تھا۔ اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ مینوفیکچرنگ سیکٹر کا پروڈکشن جولائی 2023 میں 4.6 فیصد بڑھا ہے۔ دوسری طرف مائننگ پروڈکشن میں 10.7 فیصد اور بجلی پروڈکشن میں 8 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔