سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

جے ڈی (ایس) بی جے پی کی بی ٹیم : سدارامیا

کرناٹک کے وزیر اعلی سدارامیا نے کہا کہ جنتا دل (سیکولر) کو بھارتیہ جنتا پارٹی کی بی ٹیم ہونے کے بارے میں ان کا بیان اگلی لوک سبھا انتخابات کے لئے دونوں جماعتوں کے اتحاد کی خبروں سے درست ثابت ہوا ہے۔

مسٹر سدارامیا نے یہاں ہوائی اڈے پر صحافیوں سے کہا، ”جب بھی میں جے ڈی (ایس) کو بی جے پی کی بی ٹیم کہتا تھا، اس کے لیڈر مجھ پر اپنا غصہ ظاہر کرتے تھے۔ اب وہ بی جے پی کے ساتھ اتحاد میں ہیں۔ ان کی پارٹی کے نام میں لفظ ’سیکولر‘ہے جب کہ وہ فرقہ وارانہ طاقتوں کے ساتھ جڑے ہیں۔“

سابق وزیر اعظم دیوے گوڑا کی طرف سے جاری کردہ اس بیان کا ذکرکرتے ہوئے کہ بی جے پی-جے ڈی (ایس) اتحاد ان کے لیڈر جی ٹی دیوے گوڑا کے ذریعے ریاست میں پارٹی کی بقاء کو بچانے کے لیے تھا، مسٹر سدارامیا نے کہا کہ جے ڈی (ایس) کا کوئی اتحاد نہیں ہے اورنظریہ اور اتحاد اقتدار کے حصول کے لیے بنایا گیا ہے۔

مہادائی پروجیکٹ پر انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت سے جنگلات اور ماحولیات کی منظوری ملتے ہی حکومت اسے شروع کردے گی۔ مرکزی وزیر پرہلاد جوشی کے اس بیان پر کہ وزیر اعلی کی قیادت والے وائلڈ لائف بورڈ سے مرکز کو ایک تجویز بھیجنے کو کہا گیا تھا، مسٹر سدارامیا نے سوال کیا کہ کرناٹک کی سابقہ بی جے پی حکومت نے پچھلے تین سالوں میں ایسا کیوں نہیں کیا۔