سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

جی 20 اجلاس میں چاندی اور سونے کی پلیٹیں دیکھی: شرد پوار

نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) کے سربراہ شرد پوار نے جی 20 سربراہی اجلاس کو لے کر مرکزی حکومت کو نشانہ بنایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اپنے ملک میں ایسی کانفرنسوں کی میزبانی کرنا ہمارا فرض ہے لیکن چاندی اور سونے کی پلیٹیں پہلی بار دیکھی گئیں۔ اب کیا کہیں کہ ہندوستان کا راستہ ہے ۔مجھے لگتا ہے کہ  مودی سرکار بیمار ہے۔

شرد پوار نے کہا کہ ملک میں اس طرح کی کانفرنسیں پہلے بھی دو بار ہو چکی ہیں۔ ایسا وزیر اعظم اندرا گاندھی کے دور میں ایک بار ہوا۔ اب یہ کانفرنس تیسری مرتبہ ملک میں منعقد ہو رہی ہے۔ پہلی دو کانفرنسوں میں دنیا بھر سے لوگ آئے تھے لیکن تب ماحول آج جیسا نہیں تھا۔

انہوں نے کہا کہ میں نے کبھی نہیں پڑھا کہ کسی کانفرنس میں چاندی یا سونے کی پلیٹیں  ہوں ۔ تاہم میں اس بات سے اتفاق کرتا ہوں کہ یہاں آنے والے مختلف ممالک کے سربراہان مملکت کا احترام کرنا ہمارا فرض ہے۔ یہ اس ملک کے لیے اہم ہے، لیکن اس کانفرنس کو بنیادی مسائل کے بجائے بعض لوگوں کی عظمت  کی تشہیر کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔ پوار نے کہا کہ یہ کتنا مناسب ہے اس پر آج یا کل بات کی جائے گی۔ نیز، لوگ اس کے بارے میں اپنی رائے قائم کریں گے۔

اس سے پہلے، شرد پوار نے اتوار یعنی 10 ستمبر کو ممبئی کے وائی بی سینٹر میں پارٹی میٹنگ بلائی تھی، جس میں سپریہ سولے، جینت پاٹل، انیل دیشمکھ، جتیندر اوہاد، روہت پوار سمیت کئی پارٹی لیڈروں نے شرکت کی۔ اس میٹنگ میں آئندہ لوک سبھا انتخابات کے علاوہ کئی مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

این سی پی کے تمام 19 ایم ایل اے جو ابھی تک شرد پوار کے ساتھ ہیں میٹنگ میں شریک ہوئے۔ انہوں نے مہا وکاس اگھاڑی (ایم وی اے) اتحاد کے لیے آگے بڑھنے کے راستے پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ اس کے علاوہ میٹنگ میں ایکناتھ شندے حکومت کی پالیسیوں، پارٹی کے تنظیمی ڈھانچے اور مہاراشٹر میں آنے والے بلدیاتی انتخابات کے بارے میں بھی بات ہوئی۔