سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

مہاراشٹر: مراٹھا تحریک کے آگے جھکی شندے حکومت، کنبی ذات کو ’او بی سی سرٹیفکیٹ‘ دینے کا حکم جاری

مہاراشٹر کے جالنہ میں کئی دنوں سے جاری مراٹھا ریزرویشن تحریک کے آگے جھکتے ہوئے شیوسینا اور بی جے پی کی حکومت نے جمعرات کو ’نظام دور‘ کے کنبی ذات کے دستاویزی سرٹیفکیٹ والے لوگوں کو او بی سی سرٹیفکیٹ دینے کا حکم جاری کر دیا۔ اس کا مطلب یہ ہوگا کہ کنبی کاسٹ سرٹیفکیٹ کے ساتھ مراٹھا او بی سی ریزرویشن کے لیے اہل ہوں گے۔

شندے حکومت کے اس قدم سے جالنہ میں گزشتہ 10 دنوں سے بھوک ہڑتال پر بیٹھے منوج جارانگے-پاٹل کے مطالبات میں سے ایک پورا ہو جائے گا۔اس کے ساتھ ہی ریاستی حکومت نے جارانگے-پاٹل کو ایک تحریری اپیل جاری کی ہے کہ انتظامیہ نے حکم شائع کر دیا ہے اس لیے انھیں فوراً اپنی بھوک ہڑتال ختم کر دینی چاہیے۔

اس سے قبل بدھ کو وزیر اعلیٰ ایکناتھ شندے نے اعلان کیا تھا کہ جن کے پاس نظام دور کے دستاویز (1960 کی دہائی کے) ہیں، جب مراٹھوں کو ’کنبی‘ کی شکل میں شمار کیا جاتا تھا، انھیں کنبی کاسٹ سرٹیفکیٹ دیا جائے گا تاکہ وہ او بی سی کوٹہ کا فائدہ اٹھا سکیں۔ اس اعلان کے بعد آج حکومت نے اس سلسلے میں آفیشیل حکم جاری کر دیا۔

اس فیصلے کے بعد قوی امید ہے کہ وزیر اعلیٰ ایکناتھ شندے کی حکومت کا ایک نمائندہ جلد ہی سرکاری حکم اور اپیل کے ساتھ جالنا میں جارانگے-پاٹل سے ملاقات کرے گا، جس سے 10 روزہ طویل تحریک کے ختم ہونے کا امکان ہے۔ جالنہ میں 29 اگست کو تحریک شروع ہوئی تھی اور یکم ستمبر کو وہاں مظاہرین پر پولیس کی سختی کے بعد تحریک کی آگ پوری ریاست میں پھیل گئی تھی۔