گجرات اسمبلی انتخابات: پہلے مرحلے میں 57 فیصد سے زیادہ ووٹ ڈالے جانے کی توقع

گجرات اسمبلی انتخابات کے پہلے مرحلے میں تقریباً 57.75 فیصد ووٹروں نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا

گاندھی نگر: گجرات اسمبلی انتخابات کے پہلے مرحلے میں جمعرات کو سوراشٹرا-کچھ اور جنوبی گجرات کے 19 اضلاع کی 89 سیٹوں کے لیے ہوئے تقریباً 57.75 فیصد ووٹروں نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔

سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان صبح آٹھ بجے شروع ہونے والی پولنگ شام پانچ بجے ختم ہوگئی۔ مقررہ مدت پوری ہونے کے بعد بھی کئی بوتھوں پر ووٹروں کی قطاریں لگی ہوئی تھیں اور قواعد کے مطابق ووٹ ڈالنے کے بعد ہی ای وی ایم مشینوں کو سیل کیا جائے گا۔ اس سے ووٹنگ فیصد بڑھنے کا امکان ہے۔

امریلی میں سب سے کم 52.73 فیصد پولنگ

چیف الیکٹورل آفیسر کے دفتر نے بتایا کہ ووٹنگ فیصد کی گنتی اور مرتب کرنے کا کام ابھی جاری ہے۔ شام 5 بجے تک رائے دہندگان کا ابتدائی اوسط تخمینہ ٹرن آؤٹ 57.75 فیصد سے زیادہ ہے۔ تاپی ضلع میں زیادہ سے زیادہ 72.32 فیصد، ڈانگ میں 64.84، نرمدا میں 68.09 فیصد، گیر سومناتھ میں 60.46 فیصد، کچھ میں 54.91، جام نگر 53.98، جوناگڑھ 54.95، دیو بھومی دوارکا 59.11، نواساری 65.91، پوربندر 53.84، بوٹاد 57.15، بھاو نگر 57.81، موربی 61.96، راجکوٹ 55.93، ولساڈ 65.24، سورت 57.83، سریندر نگر 60.71 اور امریلی میں سب سے کم 52.73 فیصد پولنگ ہوئی۔

چیف الیکٹورل آفیسر پی بھارتی نے کہا کہ پہلے مرحلے کے لیے 1,06,963 ملازمین/ افسروں کو تعینات کیا گیا تھا، جن میں 27,978 ریٹرننگ افسران اور 78,985 پولنگ عملہ شامل ہیں۔ پہلے مرحلے میں 19 اضلاع کی 89 نشستوں کے لیے کل 2,39,76,670 ووٹر اہل تھے، جن میں 1,24,33,362 مرد، 1,15,42,811 خواتین اور 497 خواجہ سرا ووٹر شامل ہیں۔ ان میں سے 57.75 فیصد سے زائد ووٹروں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔

انہوں نے بتایا کہ پولنگ اسٹیشنوں اور عملے کے تمام ضروری انتظامات اور الیکشن میں استعمال ہونے والے ای وی ایم اور وی وی پی اے ٹی (34324 BUs، 34324 CUs اور 38,749 VVPATs) کا استعمال کیا گیا۔ پہلے مرحلے میں 65-موربی سیٹ پر 17 امیدوار ہونے سے 02 بیلٹ یونٹ تھے، جب کہ سورت کے 163-لمبایت حلقے میں 44 امیدوار ہونے سے تین بیلٹ یونٹ تھے۔