ہندوستان کو متحد کرنا بھارت جوڑو یاترا کا مقصد: راہل

راہل گاندھی کی پد یاترا اب تک 4 ریاستوں میں مکمل ہو چکی ہے، بھارت جوڑو یاترا کا مقصد ہندوستان کو متحد کرنا ہے انہوں نے الزام لگایا کہ بی جے پی اور آر ایس ایس نفرت اور تشدد پھیلا رہے ہیں

حیدرآباد: کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے کہا ہے کہ ان کی بھارت جوڑو یاترا کا مقصد ہندوستان کو متحد کرنا ہے انہوں نے الزام لگایا کہ بی جے پی اور آر ایس ایس نفرت اور تشدد پھیلا رہے ہیں۔ یہ یاترا ان کے نظریات، تشدد اور نفرت کے خلاف ہے راہل گاندھی نے اس یاترا پر عوام کے بہتر رد عمل پر ان سے اظہار تشکر کیا اور تمام کو دیوالی کی مبارکباد بھی پیش کی۔

کانگریس کے سابق صدر نے کرناٹک کے رائچور سے تلنگانہ میں اپنی یاترا کے داخل ہونے کے بعد تلنگانہ کے تلنگانہ کے نارائن پیٹ ضلع کے مکتھل حلقہ میں خطاب کیا۔ تلنگانہ کانگریس کے کئی لیڈروں اور کارکنوں نے ان کا شاندار استقبال کیا۔ تلنگانہ میں داخل ہونے کے بعد کرناٹک پی سی سی کے لیڈر شیو کمار نے تلنگانہ کانگریس کے سربراہ ریونت ریڈی کو قومی پرچم سونپا۔

راہل گاندھی کی پد یاترا اب تک 4 ریاستوں میں مکمل ہو چکی ہے۔ تلنگانہ میں داخل ہونے والے راہل گاندھی کو دیکھنے کے لیے عوام کی بڑی تعداد جمع تھی۔ ان کی یاترا پر کافی بہتر عوامی ردعمل دیکھا گیا۔ جگہ جگہ ان کا استقبال کیا گیا ۔راہل گاندھی نے اتوار کے بعد تین دن کا وقفہ لیں گے۔ راہل گاندھی، اے آئی سی سی صدر کی حیثیت سے ملکارجن کھرگے کی حلف برداری کی تقریب میں شرکت کے لیے 24 سے 26 اکتوبر تک یاترا سے وقفہ لیں گے۔

راہل گاندھی کی بھارت جوڑو یاترا تلنگانہ میں داخل

ریاست میں راہل کی یاترا 12 دن تک جاری رہے گی۔ 12 دنوں میں 375 کلومیٹر راہل گاندھی پیدل چلیں گے اور 7 لوک سبھا و 17 اسمبلی حلقوں کا احاطہ کریں گے۔ بھارت جوڑو یاترا 31 اکتوبر کو شمس آباد کے راستہ حیدرآباد میں داخل ہوگی۔ یکم اور 2 نومبر کو وہ کوکٹ پلی اور بی ایچ ای ایل کے راستے سنگا ریڈی ضلع جائیں گے۔

تلنگانہ میں ان کی یاترا میں بڑی تعداد میں کانگریس کے لیڈران اور کارکنان شریک ہیں۔ راہل گاندھی، ہر دن تقریبا 20 تا 25 کلومیٹر پیدل چلیں گے اور عوام سے ملاقات کریں گے۔ وہ دانشوروں کے ساتھ ساتھ مختلف ذاتوں، طبقات سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات، سیاستدانوں، کھلاڑیوں، تاجروں اور فلمی شخصیات سے ملاقات کریں گے۔

راہل گاندھی اس تلگو ریاست میں عبادت گاہوں میں بھی جائیں گے اور بین عقائد کے اجتماعات میں بھی حصہ لیں گے۔ ان کی اس یاترا کا آغاز 7 ستمبر کو تمل ناڈو کے کنیاکماری سے ہوا تھا۔ انہوں نے کیرل، اے پی، کرناٹک میں اپنی یاترا پوری کرلی ہے اور اب وہ تلنگانہ میں یاترا پر ہیں۔ بھارت جوڑو یاترا کے دوران پولیس نے مکتھل کے کئی علاقوں میں ٹریفک پر پابندیاں عائد کر دیں۔