نیٹو سربراہ اجلاس: نیٹو کا چین اور روس کی جارحانہ پالیسیوں سے ملکر نمٹنے کا عزم 

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق نیٹو سربراہ اجلاس میں چین اور روس پر گفتگو ہوئی، چین کے دنیا پر بڑھتے اثرات پر بھی تشویش کا اظہار کیا گیا۔ 

لندن: امریکہ کے صدر جوزف بائیڈن نے نارتھ اٹلانٹک ٹریٹی آرگنائزیشن (نیٹو) کو امریکہ جتنا اہم قرار دے دیا ہے، ان کا کہنا ہے کہ نیٹو امریکہ جتنا اہم ہے۔ بیلجیئم کے دارالحکومت بروسیلز میں ہونے والے نارتھ اٹلانٹک ٹریٹی آرگنائزیشن (نیٹو) سربراہ اجلاس میں 29 سربراہانِ مملکت نے شرکت کی۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق نیٹو سربراہ اجلاس میں چین اور روس پر گفتگو ہوئی، چین کے دنیا پر بڑھتے اثرات پر بھی تشویش کا اظہار کیا گیا۔

ناٹو سربراہ اجلاس میں جرمن چانسلر انجیلا مارکل نے چین کو حریف قرار دے دیا۔ فرانسیسی صدر میکرون کا کہنا تھا کہ نیٹو فوجی اتحاد ہے، جبکہ چین سے تعلقات صرف فوجی نہیں۔

امریکی صدر جو بائیڈن اور روسی صدر ولادمیر پیوتن بدھ کو جنیوا میں ملاقات کریں گے۔
نیٹو کے سکریٹری جنرل جینز اسٹولن برگ نے چین کو موسمیاتی تبدیلی جیسے مسائل پر ساتھ کام کرنے کی پیش کش کر دی۔

نیٹو کے سکریٹری جنرل نے چین کی بین الاقوامی پالیسیوں کو اتحادیوں کیلئے چیلنج قرار دے دیا۔ ناٹو سربراہ اجلاس میں سربراہانِ مملکت نے سیکیورٹی کو در پیش خطرات سے مل کر نمٹنے کے عزم کا اظہار بھی کیا۔