سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

عمران خان نے 178 ووٹوں کے ساتھ اعتماد کا ووٹ حاصل کیا

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کو اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کے لئے 172 ووٹوں کی ضرورت تھی۔ انہوں نے 178 ووٹ حاصل کرکے اعتماد کا ووٹ جیت لیا۔ آٹھ سال پہلے وہ 176 ووٹ حاصل کرنے کے ساتھ وزیراعظم چنے گئے تھے۔

اسلام آباد: پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے ہفتے کو یہاں نیشنل اسمبلی میں 178 ووٹ حاصل کرکے اعتماد کا ووٹ جیت لیا۔ انہیں اعتماد کے ووٹ کے لئے ملے ووٹ ضرورت سے چھ زیادہ تھے۔

پاکستان میں سینیٹ الیکشن میں وزیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ کی ہار کی وجہ عمران حکومت کو نیشنل اسمبلی میں خصوصی اجلاس میں اعتماد کا ووٹ پیش کرنا پڑا۔ مسٹر خان کو اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کے لئے 172 ووٹوں کی ضرورت تھی۔

روزنامہ ڈان کی رپورٹ کے مطابق نیشنل اسمبلی کے صدر نے نتیجہ کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ آٹھ سال پہلے وزیراعظم عمران 176 ووٹ حاصل کرنے کے ساتھ وزیراعظم چنے گئے تھے۔ انہوں نے کہا، ’’آج وہ 178 ووٹ حاصل کئے ہیں۔‘‘

مسٹر خان کی حمایت میں ان کی پارٹی پاکستان تحریک انصاف کے 155 اراکین نے حمایت دی۔ جبکہ ایم کیو ایم – پی کے پانچ اراکین، بلوچستان عوامی پارٹی اور پاکستان مسلم لیگ – کووید کے پانچ پانچ، گرانڈ ڈیموکریٹ الائنز سے تین، عوامی مسلم لیگ اور جمہوری وطن پارٹی کے ایک ایک رکن نے وزیراعظم کو اپنا ووٹ دیا۔

اس کے علاوہ مسٹر خان کی حمایت میں آزاد امیدوار اسلم بھوٹانی نے اپنا ووٹ ڈالا۔

اعتماد ووٹ حاصل کرنے کے بعد ایوان سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر خان نے اپنے حق میں ووٹ ڈالنے والے سبھی اتحادیوں اور ارکان پارلیمنٹ کو شکریہ ادا کیا۔