سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

بیلاروس میں حکومت مخالف مظاہروں کے دوران 150 سے زائد افراد گرفتار

9 اگست کو بیلاروس کے صدارتی انتخابات کے بعد صدر الیگزینڈر لوکاشینکو کو چھ سال کے لئے دوبارہ منتخب کیا گیا تھا اس کے بعد سے ملک بھر میں مظاہرے جاری ہیں۔

ماسکو: بیلاروس میں حکومت مخالف مظاہروں کے دوران 150 سے زائد افراد کو حراست میں لیا گیا۔ غیر رجسٹرڈ ویزنا ہیومن رائٹس سنٹر نے یہ اطلاع دی ہے۔

ویزنا ویب سائٹ کے تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق، اتوار کے روز بیلاروس کے مختلف شہروں میں 151 افراد کو حراست میں لیا گیا۔ ان میں سے زیادہ تر افراد کو دارالحکومت منسک سے حراست میں لیا گیا۔

اس سے قبل منسک سٹی ایگزیکٹیو کمیٹی کے محکمہ پولیس کا کہنا تھا کہ پولیس افسران نے دارالحکومت میں حکومت کے خلاف احتجاج کرنے والے 100 کے قریب افراد کو حراست میں لیا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ 9 اگست کو بیلاروس کے صدارتی انتخابات کے بعد صدر الیگزینڈر لوکاشینکو کو چھ سال کے لئے دوبارہ منتخب کیا گیا تھا اس کے بعد سے ملک بھر میں مظاہرے جاری ہیں۔ حزب اختلاف کی پارٹیاں اس انتخابات میں بڑے پیمانے پر دھاندلی کا الزام لگا رہی ہیں۔

ایک نظر ادھر بھی:

لندن میں لاک ڈاؤن کے خلاف مظاہرہ میں 60 افراد گرفتار