سپریم کورٹ نے بازار میں تیزی کے دوران سیبی اور سیٹ کو ہوشیار رہنے کی مشورت دی ہے۔

سپریم کورٹ نے بین الاقوامی سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن...

مرکزی حکومت کا الرٹ، وزارت صحت نے تمام ریاستوں کے لیے ایڈوائزری جاری کی

 مہاراشٹرا میں زیكا وائرس کے کچھ کیسز سامنے آنے...

بھارت-منگولیا مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ” میگھالیہ میں شروع

بھارت اور منگولیا کے مشترکہ فوجی مشق "نومیڈک ایلیفینٹ"...

ہاتھرس حادثے میں جاں بحق افراد کے لیے صدر اور وزیراعظم کی تعزیت

صدر دروپدی مرمو اور وزیراعظم نریندر مودی نے منگل...

راشٹریہ شکشک ایوارڈ کے لیے خود نامزدگی 15 جولائی تک: تعلیم وزارت

راشٹریہ شکشک ایوارڈ 2024 کے لیے اہل اساتذہ سے...

امریکہ میں ٹک ٹاک پر پابندی لگانے کے ٹرمپ انتظامیہ کے فیصلے پر روک

ٹرمپ انتظامیہ نے چین حکومت کے ذریعہ امریکی شہریوں کے ڈاٹا چوری کرنے کا الزام لگاتے ہوئے ٹک ٹاک پر پابندی لگانے کا اعلان کیا تھا۔ ایک وفاقی جج نے ٹک ٹاک پر پابندی لگانے کے ٹرمپ انتظامیہ کے فیصلے پر روک لگادی ہے۔

واشنگٹن: امریکہ میں ایک وفاقی جج نے چین کی کمپنی بائٹ ڈانس کے ویڈیو شیئرنگ پلیٹ فارم ٹک ٹاک پر پابندی لگانے کے ٹرمپ انتظامیہ کے فیصلے پر روک لگادی ہے۔
پیر کے روز عدالتی دستاویزات میں بتایا گیا ’’ٹک ٹاک ایپ پر پابندی عمل میں آنے سے روکنے کے لئے ابتدائی حکم امتناعی جاری کیا گیا ہے۔ اس میمورنڈم اوپینئن کے ساتھ ایک آرڈر دیا جائے گا‘‘۔ جج نے کہا کہ ٹرمپ انتظامیہ نے اپنے اختیار سے باہر جاکر ٹک ٹاک پر پابندی عائد کی اور اس کے کام کو من مانا اور ڈراونا قرار دیا۔‘‘
واضح رہے کہ ٹرمپ انتظامیہ نے چین حکومت کے ذریعہ امریکی شہریوں کے ڈاٹا چوری کرنے کا الزام لگاتے ہوئے ٹک ٹاک پر پابندی لگانے کا اعلان کیا تھا۔ امریکہ میں ٹک ٹاک پر 20 دسمبر سے پابندی عمل میں آنی تھی لیکن بعد میں انتظامیہ نے کمپنی کو اپنی جائیداد فروخت کرکے امریکہ سے جانے کا حکم دیا، جس کے سبب اس میں تاخیر ہوئی۔