نوپور شرما کے خلاف سپریم کورٹ میں ایک بار پھر عرضی دائر

عرضی گزار نے اپنی درخواست پر فوری سماعت کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ دہلی پولیس نوپور شرما کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کر رہی ہے

نئی دہلی: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی سابق ترجمان نوپور شرما کی پیغمبر اسلام کے بارے میں تبصرہ کرنے پر ان کی گرفتاری کا مطالبہ کرنے والی ایک اور درخواست بدھ کو سپریم کورٹ میں دائر کی گئی۔

جسٹس اندرا بنرجی کی سربراہی میں دو ججوں کی تعطیلاتی بنچ نے فوری سماعت سے انکار کردیا اور عرضی گزار ابو سہیل سے کہا کہ وہ اس معاملے میں فہرست کے لیے منشننگ رجسٹرار سے رجوع کریں۔

عرضی گزار نے اپنی درخواست پر فوری سماعت کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ دہلی پولیس محترمہ شرما کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کر رہی ہے۔

ایڈوکیٹ سہیل نے قبل ازیں عدالت عظمیٰ میں درخواست دائر کی تھی جس میں جون کے وسط میں بھی بی جے پی کے سابق ترجمان کی گرفتاری کی درخواست کی گئی تھی۔ اس نے سپریم کورٹ سے مطالبہ کیا تھا کہ دہلی پولیس کو ہدایت دی جائے کہ وہ پیغمبر اسلام کے خلاف ان کے مبینہ نفرت انگیز تبصروں پر کارروائی کریں اور ان کو گرفتار کریں۔

واضح رہے کہ محترمہ شرما کے پیغمبر اسلام پر مبینہ قابل اعتراض تبصرہ کے بعد ملک اور دنیا کے مختلف حصوں میں ان کے خلاف احتجاجی مظاہرے ہوئے تھے۔