دہلی میں راجستھان کے وزیر اعلیٰ کے کمرے میں آگ پر قابو پا لیا گیا

 دہلی کے جودھ پور ہاؤس میں وزیر اعلی بھجن...

بھارت نے نئی نسل کی آکاش میزائل کا کامیاب تجربہ کیا

ڈی آر ڈی او نے نئی نسل کی ’آکاش...

تلنگانہ حکومت نئی برقی پالیسی لانے کا فیصلہ کرتی ہے

تلنگانہ حکومت نے نئی برقی پالیسی لانے کا فیصلہ...

انجلینا جولی: ہم پناہ گزینوں کی مطلوبہ مدد نہیں کر رہے ہیں

امریکی اداکارہ اور اقوام متحدہ کے کمیشن برائے پناہ گزین کی خصوصی نمائندہ انجلینا جولی نے کہا کہ ہم پناہ گزینوں کی ان کے گھروں کو واپسی کے واسطے حل یا ان کے میزبان ممالک کی حمایت کے لیے جو کچھ کر سکتے ہیں، اس کا آدھا بھی نہیں کر رہے۔

آخری اپ ڈیٹ: امریکی اداکارہ اور اقوام متحدہ کے کمیشن برائے پناہ گزین کی خصوصی نمائندہ انجلینا جولی نے برکینا فاسو کے شمال مشرق میں گوڈیبو کیمپ کا دورہ کیا۔ انجیلینا جولی نے پرتشدد کارروائیوں کی وجہ سے ملک چھوڑنے والے ہزاروں پناہ گزینوں کی حمایت کی اور نقل مکانی کی صورت حال پر تشویش کا اظہار کیا۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، اس وسیع کیمپ کے دورے کے بعد انجلینا نے کہا کہ انہیں دنیا بھر میں اس وقت نقل مکانی کی صورت حال کے حوالے سے گہری تشویش ہے۔انہوں نے کہا ”حقیقت یہ ہے کہ ہم پناہ گزینوں کی ان کے گھروں کو واپسی کے واسطے حل یا ان کے میزبان ممالک کی حمایت کے لیے جو کچھ کر سکتے ہیں، اس کا آدھا بھی نہیں کر رہے”۔

پناہ گزینوں کی میزبانی کرنے والے ممالک کی حمایت کی جائے

محترمہ انجیلینا نے زور دیا کہ برکینا فاسو جیسے ممالک کی حمایت کی جائے جو پناہ گزینوں کی میزبانی انجام دے رہے ہیں۔

ہالی وڈ اداکارہ اتوار کی شام ہیلی کاپٹر کے ذریعے مذکورہ کیمپ پہنچی تھیں۔ ان کے ہمراہ برکینا فاسو کے وزیر خارجہ ایلفا بیری بھی تھے۔ واضح رہے کہ ہر سال 20 جون کو پناہ گزینوں کا عالمی دن منایا جاتا ہے۔

اس کیمپ میں پناہ گزینوں کی تعداد 9000 تک پہنچ گئی تھی۔ مارچ 2020 میں کیمپ کے سیکیورٹی مرکز پر نئے حملے کے بعد سابقہ حملوں سے بچے ہوئے پناہ گزین فرار ہونے پر مجبور ہو گئے۔ اس کے نتیجے میں گوڈیبو کیمپ کو بند کر دیا گیا۔

تاہم دسمبر 2020 سے برکینا فاسو کے حکام اور اقوام متحدہ کے کمیشن نے پناہ گزینوں کو ایک بار پھر اس کیمپ میں واپس لوٹا دیا۔ اس سے قبل مزید عسکری نفری تعینات کر کے کیمپ کی سیکیورٹی کو مضبوط بنایا گیا۔

اقوام متحدہ کے کمیشن کے مطابق دسمبر 2020 سے جون 2021 کے درمیان 11 ہزار کے قریب افراد برکینا فاسو کے شمال میں واقع شہروں سے گوڈیبو کیمپ میں واپس آئے۔