دہلی میں راجستھان کے وزیر اعلیٰ کے کمرے میں آگ پر قابو پا لیا گیا

 دہلی کے جودھ پور ہاؤس میں وزیر اعلی بھجن...

بھارت نے نئی نسل کی آکاش میزائل کا کامیاب تجربہ کیا

ڈی آر ڈی او نے نئی نسل کی ’آکاش...

تلنگانہ حکومت نئی برقی پالیسی لانے کا فیصلہ کرتی ہے

تلنگانہ حکومت نے نئی برقی پالیسی لانے کا فیصلہ...

دہلی میں مہاجر مزدوروں کے لئے پالیسی بنانے کا مطالبہ

آہستہ آہستہ مزدور سڑکوں پر چلنے، بس اور ریلوے اسٹیشن کے پاس جمع ہونا شروع ہوگئے ہیں۔ مزدوروں کو یہ خوف ہے کہ کورونا کے پھیلاؤ سے پھر طویل لاک ڈاؤن نافذ ہوگا۔

نئی دہلی: بندھوا مزدور مکتی مورچہ نے دہلی میں مہاجر مزدور پالیسی بنانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہر مہاجر کنبے کو 10،000 روپے ہر ماہ دیے جانے چاہئے۔

مورچہ کے جنرل سکریٹری نرمل گورانا نے پیر کو یہاں جاری ایک بیان میں کہا کہ مہاجر مزدوروں کی نقل مکانی روکنے کے لئے مہاجر مزدور پالیسی لاگو کرنی ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ ۔ 19 کی دوسری لہر کے دوران مہاجر مزدوروں نے ایک بار پھر جائے کار چھوڑ کر اپنی ریاست کی طرف ہجرت کرنے لگے ہیں۔

آہستہ آہستہ مزدور سڑکوں پر چلنے، بس اور ریلوے اسٹیشن کے پاس جمع ہونا شروع ہوگئے ہیں۔ مزدوروں کو یہ خوف ہے کہ کورونا کے پھیلاؤ سے پھر طویل لاک ڈاؤن نافذ ہوگا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ کسی بھی حکومت کے پاس مہاجر مزدوروں کے لئے دور دور تک کوئی پالیسی دکھائی نہیں دیتی ہے۔ اس کا نتیجہ ہے کہ مہاجر مزدور دوسری ریاستوں میں بے بس محسوس کر رہے ہیں۔ آج مہاجر مزدور پھر سے مجبور ہو گئے ہیں۔

مسٹر گورانا نے کہا کہ پہلے مزدوروں کی رجسٹریشن کرکے، انہیں سماجی تحفظ کے طور پر دس ہزار روپے فی کنبہ دیے جائیں تاکہ مزدور اس وبا کے دوران شہروں سے نقل مکانی نہ کریں۔

انہوں نے کہا کہ مہاجر مزدوروں کی رجسٹریشن فوری طور پر شروع کی جائے اور مہاجر مزدوروں کو مفت کھانا اور راشن فراہم کیا جائے۔