لگاتار کسانون کے معاملے پر اپوزیشن ممبران کا ہنگامہ، لوک سبھا کی کارروائی میں تیسرے دن بھی خلل

بجٹ اجلاس کے تیسرے روز بھی کسانون کے معاملے پر اپوزیشن ممبران نے ہنگامہ جاری رکھا، جس کی وجہ سے آج بھی وقفہ سوال نہیں ہو سکا۔ ایوان کے وسط میں آکر اپوزیشن ممبران نے زرعی اصلاحات کے قوانین کو واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومت مخالف نعرے بازی کی۔

نئی دہلی: لوک سبھا کے بجٹ اجلاس کے تیسرے روز لگاتار کسانون کے معاملے پر حزب اختلاف کے ممبران نے ہنگامہ جاری رکھا، جس کی وجہ سے آج بھی وقفہ سوال نہیں ہو سکا شام 4 بجے، اسپیکر اوم برلا نے وقفہ سوال شروع کردیا اور بی جے پی کے رمیش بدھوڑی کا نام سوالات کرنے کے لئے پکارا۔ دوسری طرف، ایوان کے وسط میں آکر حزب اختلاف کے ممبران نے زرعی اصلاحات کے قوانین کو واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومت مخالف نعرے بازی کی۔

نعرے بازی کے درمیان، روڈ ٹرانسپورٹ قومی شاہراہ کے وزیر نتن گڈکری نے اس محکمہ سے متعلق سوالات کے جوابات دیئے۔ مسٹر بدھوڑی، جنہوں نے معذور افراد کی سہولت سے متعلق سوالات کئے تھے، اپوزیشن ممبران سے کہا کہ وہ معذور افراد کی دلچسپی کے بارے میں سوالات اٹھائیں اور ایوان میں خلل نہ ڈالیں۔

جب دو سوال ہونے کے بعد نعرہ بازی بند نہیں ہوئی تو اسپیکر برلا نے اپوزیشن ممبران سے کہا کہ وقفہ سوال اپوزیشن کے لئے بہت اہم ہے۔ اس میں حکومت عوامی دلچسپی کے موضوعات پر ردعمل ظاہر کرتی ہے۔ لہذا، وقفہ سوال میں خلل نہیں ہونا چاہئے۔ لیکن حزب اختلاف کے ممبروں پر اس کا کوئی اثر نہیں ہوا۔ اس کے بعد اسپیکر نے ایوان کی کارروائی چار بجے تک ملتوی کردی۔

× Join Whatsapp Group